order to use makeup

0
143
Makeup istemal Karne Ka Hukm

اشیاء میک اپ کے استعمال کا حکم

⁉️سوال:
کیا عورت اپنے چہرے پر میکپ کرسکتی ہے جبکہ وہ اسے غیر محرم کے سامنے ظاہر نہ کرے۔ صرف عورتوں کے سامنے ظاہر کرے۔؟؟

جواب: امام ابن باز رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ :
“اگر میک اپ چہرے کے لئے نقصان دہ ثابت نہ ہو تو عورت کے لئے میک اپ کرنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔

بشرطیکہ میک اپ پانی کو جلد تک پہنچنے سے روکنے والا نہ ہو۔ لیکن اگر میک اپ ایسا ہو جو پانی کو جلد تک پہنچنے سے روکتا ہو تو ایسے میک اپ کو وضو کرتے وقت زائل کردیا جاۓ گا۔ (مثلا ناخن پالش)

اور اگر میک اپ ایسا ہے جو چہرے کےلئے نقصان دہ ثابت ہو، جسکی وجہ سے کوئی بیماری ہوجائے یا داغ دھبے نکل آئیں یا اس جیسا کوئی دوسرا مسئلہ ہو تو پھر بہتر یہی ہے

کہ ایسا میک اپ نہ کیا جائے کیونکہ ایسی صورت میں وہ اس کے لیے نقصان دہ ثابت ہوگا۔ لیکن صرف بناؤ سنگھار اور تجمل کےلیے ہو اور اس میں کوئی نقصان نہ ہوتو کوئی حرج نہیں ہے۔

Aurat ka barik kapda pahenna kaisa hai

کسی عـورت کا دیگر عـورتوں کے سامنے تنگ اور باریک لباس پہننا

علامہ ابن عثیمین رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ:
عورت کاایسا تنگ اور باریک لباس پہننا جائز نہیں جو اس کے پرکشش و پر فتن مقامات کو ظاہر کرے ۔ نہ ہی اس کے محارم کے سامنے اور نہ ہی دیگر عورتوں کے سامنے۔*

فتاوی ابن عثیمین :(2/825)

اسی طرح یہ بھی کہتے ہیں کہ :
عـورت تنگ اور باریـک لباس صرف اس كے سامنے پہن سكتى ہے جس كے سامنے شرمگاہ ظاہر كر سكتى ہے، اور وہ شوہر ہے (اس کے علاوہ کوئی نہیں) : كيونكہ شوہر اور بيوى كے مابين كوئى ستر نہيں۔*

اسی طرح صالح الفوزان کہتے ہیں:
عورت کے لیے تنگ اور باریک لباس کا پہننا جائز نہیں ہے خواہ عورتوں کی موجودگی میں ہی کیوں نہ ہو ۔ اس لئے کہ وہ دوسروں کے لئے برا قدوۃ ثابت ہوگی۔

جب دوسری عورتیں اس کو اس طرح کے لباس میں دیکھیں گی تو ہوسکتا ہے کہ وہ بھی اسکی پیروی کریں اور اس طرح کا لباس پہنیں۔*

اسی طرح یہ بھی فرماتے ہیں کہ:
عورت جس طرح مردوں سے ستر چھپاتى ہے عورتوں سے بھى اسى طرح ستر چھپائيگى ، مگر جو اعضاء عورت عادتا ضرورت كے وقت کھلے رکھتی ہے مثلا چہرہ ، ہاتھ اور پاؤں تو انہیں عورتوں كے سامنے بھی کھلا رکھ سكتى ہے.*

https://gundai.fpvgmc.ch/Islam_Me_Aurat_Ka_Makeup.html

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here