Friday, July 1, 2022
Home acchi baten Hijab islam ka hissa nhi hai

Hijab islam ka hissa nhi hai

بروز منگل بتاریخ 15 مارچ 2022 کرناٹک کی تاریخ میں ایک ایسا دن ہے

جس میں کرناٹک کی عدالت عالیہ نے واضح الفاظ میں کہا کہ

حجاب اسلام کا حصہ نہیں ہے

اس ایک جملے اور فیصلے سے کئی مسلم مخالف جماعتیں پھولے نہیں سما رہی ہیں

بلکہ سوشل میڈیا پر اس معاملے کو لے کر وہ لوگ جشن کا سا ماحول بنارہے ہیں

اور
وہیں پر مسلمان ایک دوسرے کو یہی تسلی دینے میں مصروف ہیں کہ

قانون پر بھروسہ رکھو ، وہیں سے انصاف مل سکتا ہے

لیکن ایسے لوگ اس حقیقت سے منہ موڑ لیتے ہیں کہ

صرف یہی ایک سیکٹر رہ گیا تھا اور اب وہاں بھی آخری کیل ٹھوک دی گئی ہے۔۔۔۔

جو سب کا مسیحا تھا وہ سب سے بڑا قاتل

میں بحیثیت بھارتی شہری کے بھارت کے سمویدھان

اور عدالت کی دل سے عزت کرتا ہوں
لیکن

جب کھلی آنکھوں سے درد نظر آئے تو پھر قلم کو جنبش ہوتی ہے

اور جذبات الفاظ کا روپ دھار لیتے ہیں

اس وقت میں مسلمانانِ ہند اور مسلم جماعتوں کے نمائندہ چہروں سے یہ پوچھنا چاہوں گا کہ

جب بابری مسجد کا فیصلہ سنایا گیا تب بھی سب خاموش رہے

اہل کشمیر پر مظالم ہوئے سب محو تماشا رہے

اب جبکہ حجاب کو بےحجاب کرتے ہوئے

ایک اسلامی عمل کو غیر اسلامی قرار دیا گیا

تب بھی سب کے سب انگشت بدنداں ہیں

ابھی بھی کسی کو فکر نہیں ہے کہ حالات کس دھارے میں بہہ رہے ہیں

ان حالات میں مسلمانوں کے عمومی موقف جاننے کی کوشش کی جائے

تو پتہ چلتا ہے کہ اکثر کو تو اسکی خبر بھی نہیں کہ انکی پیٹھ پیچھے کیا ہورہا ہے

میں زمینی جائزہ لیتے ہوئے نہایت ہی افسوس کے ساتھ یہ “سچ” لکھ رہا ہوں کہ

اکثر عام مسلمانوں کی صورت حال یہ ہوچکی ہے کہ
*
اُنہیں ”خوددار” بننے کیلئے کہا گیا تو وہ “خودغرض” بن کر رہ گئے ہیں

انہیں صرف اپنی اور اپنے اہل خانہ کی فکر ہے ،

انہی کی زندگی اور عیش و عشرت سے مطلب ہے

انہیں اس سے کوئی فرق ہی نہیں پڑتا کہ
من حیث القوم آج مسلمانوں کی کیا صورت حال ہے

اسلام اور اہل اسلام کے خلاف کن کن محاذوں پر کام ہورہا ہے

اور مسلم دشمن عناصر کس طریقے سے کام کررہے ہیں

بہت ہی درد ، نہایت ہی کرب اور بہت دور کا سوچتے ہوئے

اسی دور اندیشی کے ساتھ اللہ تعالیٰ سے عاجزانہ دعا کرتے ہوئے

(کہ الہ العالمین کبھی بھی ایسے حالات نہ لائیے گا

اسلام اور اہل اسلام کی حفاظت فرمائے) یہ کہنا پڑ رہا ہے کہ

اگر اب بھی مسلمان بیدار نہیں ہوں گے ،

اسلامی تعلیمات کو اپنی زیست کا جزء لاینفک نہیں بنائیں گے

اور مکمل اتحاد کے ساتھ اسلام بلکہ خود اپنی بقاء کے لئے کام نہیں کریں گے

تو پھر یاد رکھیں ، یہ یاد رکھ لیں کہ بھارت کو بھی اندلس بننے سے کوئی نہیں روک سکتا سوائے رب العالمین کے

اور آج !!!!
رفتہ رفتہ تاریخ خود کو دہرانے میں مصروف ہے اور ہم سب دانستہ اسکے معاون بنتے جارہے ہیں !

اب کرنے کا کام کیا ہے؟
صرف صاحبِ تحریر مُبَصِّر بننے پر ہی مُکتفی ہیں یا کچھ حل بھی پیش کریں گے !!!

تو اس صورت میں مَیں یہی کہوں گا

کہ
آج کے حالات جو میں نے دیکھا اور محسوس کیا وہ میں نے لکھ دیا

کہ آج اسلاموفوبیا کے ذریعے ساری دنیا مسلمانوں کو مٹانے کے در پہ ہے

اور مسلمان ان تمام حالات سے بےخبر خواب و خرگوش کے مزے لوٹ رہے ہیں

لیکن یہ ایک ایسی حقیقت ہے کہ اس کی پیشن گوئی

جناب محمد الرسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے آج سے تقریباً ساڑھے چودہ سو سال قبل ہی کردی تھی

اور اس کا سبب بھی بتادیا تھا
لہذا اگر اس situation کو یہاں Implement کردیا جاتا ہے تو سبب بنتا ہے

“وَھن”
حُبُّ الدُّنْیَا وَکَرَاھِیَۃُ الْمَوْتِ
دنیوی محبت اور موت سے نفرت

آج کے حالات کا سب سے آسان حل یہی ہے

کہ
جس اللہ نے پیدا کیا اور آج تک کھلارہا ہے وہ آخری سانس تک آپ کو روزی دے گا

اور موت سے ڈرنے کی کیا ضرورت ہے ایک نہ ایک دن تو مرنا ہی ہے

لہذا
اگر کوئی ایسا کام کرتے ہوئے مریں جس سے اسلام اور اہل اسلام کا بھلا ہو

تو پھر یہ حسن خاتمہ ہوسکتا ہے

لیکن ایک بات کا خیال رکھنا ضروری ہے

کہ
جذبات میں کوئی ایسا کام نہ کریں جس سے مسلمانوں کی شبیہ متاثر ہو

اور جس بھی ملک میں رہ رہے ہوں

وہاں کی سلامتی کیلئے ہرگز خطرہ نہیں بننا چاہیے

کیونکہ
اسلام ایک پُر امن مذہب ہے وہ کبھی یہ تعلیم نہیں دے گا

کہ آپ کی وجہ سے کسی بھی معصوم کو خواہ وہ مسلم ہو

یا غیر مسلم بلکہ انسان کے علاوہ کسی جانور کو بھی نقصان پہنچے

اور ماحول میں کشیدگی پیدا ہو بلکہ اسلام تو امن عالم کا ضامن ہے

اور اسی کی تعلیمات کو مد نظر رکھتے ہوئے جو بھی کام کرنا ہے وہ کرنا ہوگا

اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ اسلام ، اہل اسلام

اور بالخصوص مسلمانانِ ہند کی حفاظت فرمائے

https://www.livehindustan.com/national/story-arif-mohammad-khan-hijab-is-not-part-of-islam-it-is-not-fair-to-compare-it-with-sikh-turban-5804132.html

Previous articleRamzan se pahele dil ki safai
Next articleAbdul Kalam
RELATED ARTICLES

How do Islamic countries treat their minorities?

https://www.youtube.com/watch?v=YIk9gKZ-ilg اسلامی ممالک اپنی اقلیتوں کے ساتھ کیسا سلوک کرتے ہیں؟ کم...

Gairat mand shoher kon ?

غیرت مند شوہر!! حضرت سیِّدُنا قاضی ابو عبد اللہ محمد بن احمد بن موسیٰ رَحْمَۃُ اللّٰہِ تَعَالٰی...

Turkey me students ne quran ko laat mara football ki tarah

ترکی میں طلبہ نے قرآن کو فٹ بال کی طرح لات ماری، ویڈیو وائرل ہوگئی رباط: ترکی...

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

How do Islamic countries treat their minorities?

https://www.youtube.com/watch?v=YIk9gKZ-ilg اسلامی ممالک اپنی اقلیتوں کے ساتھ کیسا سلوک کرتے ہیں؟ کم...

Gairat mand shoher kon ?

غیرت مند شوہر!! حضرت سیِّدُنا قاضی ابو عبد اللہ محمد بن احمد بن موسیٰ رَحْمَۃُ اللّٰہِ تَعَالٰی...

Turkey me students ne quran ko laat mara football ki tarah

ترکی میں طلبہ نے قرآن کو فٹ بال کی طرح لات ماری، ویڈیو وائرل ہوگئی رباط: ترکی...

Izzat Ki Roti Aur Pakiza khana

عزت کی روٹی اور پاکیزہ غذا الحمد لله وحده، والصلاة والسلام على من لا نبي بعده، وبعد!

Recent Comments

Translate »