Wednesday, December 1, 2021
Homeacchi batenQuran Ki Do Missal Zarur Jane

Quran Ki Do Missal Zarur Jane

قرآن میں دو مثالیں بہت سخت انداز کی ہیں: ایک کتے کی مثال، دوسری گدھے کی مثال اور دونوں مثالیں دو قسم کے علماء کے لئے بیان کی گئی ہیں۔

کتے کی مثال ان علماء کے لئے جو دنیا اور خواہشات نفس میں پڑ کر دین سے منحرف ہو گئے۔

(یعنی جس طرح ایک کتا چاہے وہ بھوکا ہو یا شکم سیر ہمیشہ وہ زبان لٹکائے ہانپتا اور رال ٹپکاتا رہتا ہے

اسی طریقے سے اس قسم کے علماء اپنے دین وایمان کی پرواہ کیے بغیر محض خواہشات نفس کی تکمیل کیلئے ہر وقت ہانپتے اور حصول دنیا کے لیے رال ٹپکاتے رہتے ہیں)۔

گدھے کی مثال ان علماء کے لئے جو اپنے علم پر عمل نہیں کرتے۔

(یعنی جس طرح گدھے کے اوپر کتابوں کی گٹھری لاد دی جائے مگر اسے ان کی قیمت و اہمیت کا کوئی احساس نہیں ہوتا اور نہ ہی اسے معلوم ہوتا کہ اس کی پیٹھ پر کیا لدا ہوا ہے

اسی طریقے سے یہ بے عمل علماء علم حاصل کرنے کے باوجود علم کی قیمت اور اس کے تقاضے بھول جاتے ہیں اور حلال و حرام جائز و ناجائز کی تمیز کھو دیتے ہیں)۔

paheli Misaal : Sureh Araf

پہلی مثال: سورة الأعراف

( وَاتْلُ عَلَيْهِمْ نَبَأَ الَّذِيَ آتَيْنَاهُ آيَاتِنَا فَانسَلَخَ مِنْهَا فَأَتْبَعَهُ الشَّيْطَانُ فَكَانَ مِنَ الْغَاوِينَ ۝ وَلَوْ شِئْنَا لَرَفَعْنَاهُ بِهَا وَلَكِنَّهُ أَخْلَدَ إِلَى الأَرْضِ وَاتَّبَعَ هَوَاهُ فَمَثَلُهُ كَمَثَلِ الْكَلْبِ إِن تَحْمِلْ عَلَيْهِ يَلْهَثْ أَوْ تَتْرُكْهُ يَلْهَث ذَّلِكَ مَثَلُ الْقَوْمِ الَّذِينَ كَذَّبُواْ بِآيَاتِنَا فَاقْصُصِ الْقَصَصَ لَعَلَّهُمْ يَتَفَكَّرُونَ ) ۝ 175-176

ترجمہ: اور ان لوگوں کو اس شخص کا حال پڑھ کر سنایئے کہ جس کو ہم نے اپنی آیتیں دیں پھر وہ ان سے بالکل نکل گیا ، پھر شیطان اس کے پیچھے لگ گیا سو وہ گمراہ لوگوں میں شامل ہوگیا ۔

اگر ہم چاہتے تو اس کو ان آیتوں کی بدولت بلند مرتبہ کر دیتے لیکن وہ تو دنیا کی طرف مائل ہوگیا اور اپنی نفسانی خواہش کی پیروی کرنے لگا سو اس کی حالت کتے کی سی ہوگئی

کہ اگر تو اس پر حملہ کرے تب بھی وہ ہانپے یا اسکو چھوڑ دے تب بھی ہانپے یہی حالت ان لوگوں کی ہے جنہوں نے ہماری آیتوں کو جھٹلایا ۔

سو آپ اس حال کو بیان کر دیجئے شاید وہ لوگ کچھ سوچیں۔

Dusri Misaal : Sureh Jumah

دوسری مثال: سورة الجمعة

( مَثَلُ الَّذِينَ حُمِّلُوا التَّوْرَاةَ ثُمَّ لَمْ يَحْمِلُوهَا كَمَثَلِ الْحِمَارِ يَحْمِلُ أَسْفَارًا ۚ بِئْسَ مَثَلُ الْقَوْمِ الَّذِينَ كَذَّبُوا بِآيَاتِ اللَّهِ ۚ وَاللَّهُ لَا يَهْدِي الْقَوْمَ الظَّالِمِينَ (5)

ترجمہ:جن لوگوں کو تورات پر عمل کرنے کا حکم دیا گیا پھر انہوں نے اس پر عمل نہیں کیا ان کی مثال اس گدھے کی سی ہے

جو بہت سی کتابیں لادے ہو اللہ کی باتوں کو جھٹلانے والوں کی بڑی بری مثال ہے اور اللہ ( ایسے ) ظالم قوم کو ہدایت نہیں دیتا۔

https://ummat-e-nabi.com/quran-ke-nuzul-ka-asal-maksad/

script async src="https://pagead2.googlesyndication.com/pagead/js/adsbygoogle.js">
RELATED ARTICLES
- Advertisment -

Most Popular

Recent Comments

Translate »