Sunday, October 17, 2021
HomeUncategorizedRoza ke fazail aur fawaid

Roza ke fazail aur fawaid

رمضان کے روزوں کے سلسلہ میں اس وقت کافی
کاہلی پائی جاتی ہے اور اتنی کثرت سے لوگ روزے نہیں رکھتے جتنی کثرت سے رکھنی چاہیے ، اور بہت سے لوگ سمجھتے ہیں کہ یہ بلاوجہ بھوکے پیاسے مرنا ہے لیکن ایسا نہیں ہے ،،

روزے کے بہت سارے فوائد اور فضائل ہیں –
حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا :

“من صام رمضان ایمانا واحتسابا غفر لہ ما تقدم من ذنبہ ،،
جس نے رمضان کے روزے ایمان کے ساتھ اور صرف اللہ سے اجر و ثواب حاصل کرنے کے لیے رکھا اس کے تمام گزشتہ گناہ معاف کردیئے جائیں گے –
( صحیح بخاری ، کتاب الصوم ،متفق علیہ  )

اور حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا :

” ابن آدم کے ہر نیک عمل کے اجر و ثواب کو اس کے دس گناہ سے لے کر سات سو گنا تک بڑھا دیا جاتا ہے سوائے روزہ کے ، اس کے بارے میں اللہ تعالی فرماتا ہے : یہ میرے لئے ہے اور میں ہی اس کا بدلہ دوں گا ، کیونکہ روزے دار اپنے کھانے اور شہوت کو میرے لئے ترک کرتا ہے ، اور روزے دار کے لیے دو مسرتیں ہیں ، ایک افطار کے وقت ، دوسری اپنے رب سے ملاقات کے وقت ، اور روزہ دار کے منہ کی بو اللہ تعالی کو مشک سے زیادہ پسند ہے ، اور روزہ ڈھال ہے پس جب تم میں سے کوئی روزہ رکھے تو نہ فحش بات کہے اور نہ شور کرے ، اور اگر اس کو کوئی گالی دے تو اس کو چاہیے کہ گالی دینے والے سے کہہ دے کہ میں روزہ دار ہوں –
( صحیح مسلم ، باب فضل الصیام  )

اور حضرت عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا :
”  روزہ اور قرآن کریم بندے کی قیامت کے دن شفارش کریں گے ، روزہ کہے گا : اے رب ! میں نے اس کو دن میں کھانے اور خواہشات کی تکمیل سے روکے رکھا تھا ، لہذا اس کے حق میں میری شفارش قبول فرما ، اور قرآن کریم کہے گا : میں نے اس کو رات میں سونے سے روکے رکھا تھا ، لہذا اس کے حق میں میری شفارش قبول فرما ، پھر اللہ تعالی ان دونوں کی شفارش قبول فرمائے گا – ،،
( مسند احمد ، 2 / 174 )

اور سہل بن سعد رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا :
” جنت کے آٹھ دروازے ہیں ، ان میں سے ایک دروازہ کا نام ” باب الریان ،، ہے اس سے صرف روزے دار داخل ہوں گے ،،
( صحیح بخاری ، باب الریان للصائمین )

Roze Ke Tibbi Fayde

طبی ، اخلاقی اور معاشرتی اعتبار سے بھی روزے کے بہت سے فوائد ہیں ، اس سے مال داروں کو غریبوں کے فقروفاقہ اور بھوک و پیاس کی تکلیف کا احساس ہوتا ہے ، اور صدقہ و خیرات کی ترغیب ہوتی ہے ، پیٹ اور بلڈ پریشر وغیرہ کے مریضوں کے لئے بھی روزہ بہت مفید ہے ، سال بھر خوب شکم سیر ہو کر کھانے پینے سے جو فاسد مادے پیٹ اور جسم کے دوسرے حصوں میں جمع ہو جاتے ہیں وہ سب روزے سے زائل ہوجاتے ہیں ، اس سے احتساب نفس اور ہر وقت اللہ تعالی کے حاضر و ناظر ہونے کے عقیدہ و یقین کو بھی جلا ملتی ہے

بہرحال روزہ کے روحانی جسمانی معاشرتی اور اخلاقی ہر اعتبار سے بڑے فوائد ہیں اور یہ اسلام کا ایک اہم رکن اور فریضہ بھی ہے ، اس وجہ سے اس میں کاہلی کرنا ہرگز جائز نہیں ہے ، اللہ تعالی مسلمانوں کو صراط مستقیم پر چلائے اور اس قسم کی کوتاہیوں اور غلطیوں سے بچائے . ( آمین )

script async src="https://pagead2.googlesyndication.com/pagead/js/adsbygoogle.js">
RELATED ARTICLES
- Advertisment -

Most Popular

Recent Comments

Translate »