Friday, July 1, 2022
Home Deeni Baten witr ke baad nafil padhna kaisa hai

witr ke baad nafil padhna kaisa hai

وتر کے بعد نفل پڑھنا کیسا ہے؟🌹
سوال : اگر عشاء کے بعد وتر پڑھ لی جائے پھر رات میں دوبارہ نوافل پڑھنے کا موقع ملے تو ایسی صورت میں جو وتر ہم نے پڑھی ہے اس کے لئے ہمیں کیا طریقہ اختیار کرنا پڑے گا ، تاکہ ہماری رات کی آخری نماز وتر ہو ، مجھے ایسا یاد پڑتا ہےکہ حدیث میں ہے کہ ایسی صورت میں پہلے ہم ایک رکعت پڑھ کر اس کو جفت کر لیں پھر جتنی رکعتیں نوافل پڑھنا ہو پڑھیں اور اخیر میں وتر پڑھ کر نماز کا سلسلہ ختم کر دیں، قرآن و حدیث میں اس کا کیا طریقہ بتایا گیا ہے ؟ آپ جواب مرحمت فرمائیں۔
جواب: اگر رات میں اٹھ کر نوافل پڑھنے کا ارادہ ہو تو عشاء کے بعد وتر نہیں پڑھنا چاہئے، بلکہ اس کومؤخر کر کے آخر میں پڑھنا چاہئے ، کیونکہ صحیحین میں ہے کہ ” تمہاری رات کی آخری نماز وتر کی ہونی چاہئے“(1)
البتہ اگر عشاء کے بعد رات میں اٹھ کر نوافل یا تہجد کے پڑھنے کا ارادہ نہیں تھا اس واسطے وتر پڑھ لیا مگر رات پھر بیدار ہوگئےاور نوافل پڑھنے کا دل چاہنے لگا تو نوافل پڑھ سکتے ہیں ،اول رات میں پڑھی گئی وتر کو ایک رکعت پڑھ کر جفت بنانے اور دوبارہ آخر میں پڑھنے کی ضرورت نہیں ہے ،کیونکہ ایسا کسی حدیث میں وارد نہیں ہے صرف بعض علماء کاقول ہے، اور وتر کے بعد اتنا طویل وقت گزر جانے اور سونے وغیرہ عمل کے بعد ایک رکعت پڑھنے سے اس کے جفت ہونے کی بات غیر معقول معلوم ہوتی ہے۔
علا وہ ازیں اس سے تین وتر ایک ہی رات میں پڑھنا لازم آتا ہے ، اور اگر پہلی وتر کو اسی طرح باقی رکھیں اور آخر میں دوسری وتر پڑھیں تو ایک ہی رات میں دو وتر پڑھنا لازم آتا ہے ، جو حدیث : ”لاَ وِتْرَانِ فِي لَيْلَةٍ“(2) کی وجہ سے درست نہیں ،اس واسطے میرے نزدیک پہلی صورت زیادہ صحیح ہے ، یعنی رات میں اٹھنے کے بعد نہ ایک رکعت پڑھ کر پہلی وتر کو جفت بنائیں اور نہ اخیر میں دوبارہ وتر پڑھیں بلکہ ایسی صورت میں وتر کے بعد جتنے نوافل پڑھنا چاہیں پڑھ لیں اور بس، اور حدیث: ” اپنی رات کی آخری نماز وتر بناؤ “ کو استحباب اورعام حالات پر محمول کریں گے اور پہلی صورت کو جواز اور مخصوص حالت پر ، کیونکہ صحیح مسلم میں رسول اللہ ﷺ سے وتر کے بعد دو رکعتوں کا پڑھنا ثابت ہے، بلکہ بعض روایتوں میں وتر کے بعد دو رکعت نماز پڑھنے کا حکم بھی وارد ہے، جس سے معلوم ہوتا ہے کہ وتر کو آخری نماز بنانے کا امر استحباب اور عام حالات کے لئے ہے اور وتر کے بعد نوافل پڑھنا جائز ہے ، خاص طور سے رات میں اٹھ کر نوافل پڑھنے کا ارادہ جب اول رات میں نہ رہا ہو بلکہ رات میں آنکھ کھلی تو نوافل پڑھنے کا ارادہ ہوگیا۔واللہ اعلم بالصواب.

(1) صحيح البخاري:2/488[998] کتاب الوتر، باب ليجعل آخر صلاته وترا، صحيح مسلم: 1/510[740] کتاب صلاة المسافرين وقصرها، کتاب صلاة الليل وعدد رکعات النبي ﷺ في الليل وإن الوتر رکعة.
(2) سنن الترمذي: 2/333 [470] کتاب الصلاة، باب ما جاء لا وتران في ليلة، وقال الألباني: صحيح، انظر صحيح سنن الترمذي:1/146[473].

نعمة المنان مجموع فتاوى فضيلة الدكتور فضل الرحمن: جلد دوم، صفحہ: 289- 290.

RELATED ARTICLES

How do Islamic countries treat their minorities?

https://www.youtube.com/watch?v=YIk9gKZ-ilg اسلامی ممالک اپنی اقلیتوں کے ساتھ کیسا سلوک کرتے ہیں؟ کم...

Gairat mand shoher kon ?

غیرت مند شوہر!! حضرت سیِّدُنا قاضی ابو عبد اللہ محمد بن احمد بن موسیٰ رَحْمَۃُ اللّٰہِ تَعَالٰی...

Turkey me students ne quran ko laat mara football ki tarah

ترکی میں طلبہ نے قرآن کو فٹ بال کی طرح لات ماری، ویڈیو وائرل ہوگئی رباط: ترکی...

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

How do Islamic countries treat their minorities?

https://www.youtube.com/watch?v=YIk9gKZ-ilg اسلامی ممالک اپنی اقلیتوں کے ساتھ کیسا سلوک کرتے ہیں؟ کم...

Gairat mand shoher kon ?

غیرت مند شوہر!! حضرت سیِّدُنا قاضی ابو عبد اللہ محمد بن احمد بن موسیٰ رَحْمَۃُ اللّٰہِ تَعَالٰی...

Turkey me students ne quran ko laat mara football ki tarah

ترکی میں طلبہ نے قرآن کو فٹ بال کی طرح لات ماری، ویڈیو وائرل ہوگئی رباط: ترکی...

Izzat Ki Roti Aur Pakiza khana

عزت کی روٹی اور پاکیزہ غذا الحمد لله وحده، والصلاة والسلام على من لا نبي بعده، وبعد!

Recent Comments

Translate »